Skip to main content

عمران خان ریپٹلین سائیکوپیتھ

نفسیاتی مریض یا پاگل لفظ 'سائیکوپیتھ' کا درست ترجمہ نہیں۔ بلکہ 'سائیکوپیتھ' عام لوگوں کی نسبت ذہنی طور پر زیادہ چاک و چوبند ہوسکتے ہیں۔ ان کو 'ہیومن پریڈیٹرز' بھی کہا جاتا ہے۔ 'ہیومن پریڈیٹرز' یعنی یہ انسانوں کی جان، مال حتی کہ ان کے احساسات اور جذبات کا بھی شکار کرتے ہیں۔  وہ یہ سب یہ کیسے کر لیتے ہیں اور میں نے عنوان میں عمران خان کا نام کیوں لکھا ہے؟ اس کا جواب یہ ہے کہ 'سائیکوپیتھ' میں دوسرے انسانوں سے الگ کچھ صفات ہوتی ہیں جو ان کو قدرتی شکاری بناتی ہیں۔ انکی یہ صفات دنیا بھر کے ماہرین نے برسوں کی تحقیق اور محنت کے بعد جمع کی ہیں اور حیرت انگیز طور پر وہ تقریباً ساری عمران خان میں پائی جاتی ہیں۔  سائیکوپیتھس کو 'ریپٹلینز' بھی کہا جاتا ہے۔ کیونکہ انکی کچھ عادتیں ریپٹلینزجیسی ہوتی ہیں۔ ریپٹلینز کے بارے میں قرآن اور سائنس نے کچھ آگہی دی ہے اس پر بھی بات کرینگے۔  اگر آپ ایک بار ٹھنڈے دل سے یہ مضمون پڑھ لیں تو شائد آپ عمران خان کی مقبولیت، شخصیت، سوچ اور فیصلوں کو سمجھ لیں۔ بہت سی چیزوں کے بارے میں آپ کی حیرت دور ہوسکتی ہے۔  ریپٹلین سائیک

عمران خان مغرب کا آلہ کار

 1995ء میں عمران خان نے بدنام زمانہ یہودی خاندان گولڈ سمتھ سے رشتہ استوار کیا اور 1996ء میں پی ٹی آئی (پاکستان تحریک انصاف) کی بنیاد رکھی۔ گولڈ سمتھ خاندان بانیان اسرائیل میں سے ہے۔ 

اس دور میں حکیم محمد سعید اور ڈاکٹر اسرار احمد مرحوم نے عمران خان کو مغرب کا آلہ کار قرار دیا۔ بلکہ حکیم محمد سعید نے تو باقاعدہ تفصیل بھی بتائی کہ اس کو کس طرح اور کب پوری طرح پاکستان پر مسلط کیا جائیگا۔ اس کی وہ پیشن گوئیاں حیرتناک انداز میں پوری ہوئیں۔ تاہم ان انکشافات کے بعد حکیم محمد سعید کو قتل کر دیا گیا۔ (آج تک قاتل کا سراغ نہیں ملا)

جمائما کے ساتھ عمران خان کی لڑائیاں عروج پر پہنچیں حتی کہ جمائما کا بازو بھی ٹوٹا۔ بقول عمران خان کے میں اپنا دفاع کر رہا تھا کیونکہ جمائما کو چیزیں اٹھا کر مارنے کی عادت تھی۔ عمران خان نے مہر بخاری کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ طلاق کے بعد بھی میرا لندن میں قیام و طعام ہمیشہ گولڈ سمتھ فیملی کے ساتھ ہی ہوتا ہے۔ 

صاحبزادہ یعقوب خان کی ہنری کسنجر سے امریکہ میں ملاقات ہوئی تو ہنری کسنجر نے کہا کہ 'ہمارے لڑکے کا خیال رکھنا۔' صاحبزادہ یعقوب خان نے پوچھا کہ آپکا لڑکا کون ہے؟ تو ہنری کسنجر نے جواب دیا 'عمران خان'۔ کیا ہنری کسنجر کے بارے میں کچھ بتانے کی ضرورت ہے کہ کون ہے اور کیا کرتا رہا؟

انڈیا کے ایک پروگرام میں ایک اینکر نے عمران خان سے سوال کیا کہ آپ کے رشتے داروں کی کچھ یہودی کمپنیاں آپ کے کینسر ہسپتال میں انسانوں پر تجربات کر رہی ہیں؟ تو عمران خان نے سوال کا جواب دینے سے انکار کر دیا۔ 

جب عمران خان کی حکومت بنی تو جورج سورس نامی بدنام زمانہ یہودی نے عمران خان سے خصوصی طور پر ملاقات کی۔ یہ دنیا میں ہم جنس پرستی کو عام کرنے کے علاوہ اور بھی کئی خطرناک منصوبوں پر کام کر رہا ہے۔

معروف صحافی ارشد شریف نے کچھ اپنے ایک پروگرام میں ثبوت پیش کیے تھے کہ کچھ یہودی کمپنیاں بھی پی ٹی آئی کو فنڈز بھیجتی ہیں۔

عمران خان کی حکومت میں پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار کسی رکن قومی اسمبلی نے اسرائیل کے حق میں تقریر کی۔ پی ٹی آئی کی عاصمہ حدید کو یہ تقریر کرنے پر کوئی شوکاز نوٹس تک جاری نہیں کیا گیا۔ پھر ایسی ہی ایک تقریر شہر یار آفریدی نے بھی کی۔ عمران خان کے دور حکومت میں پہلی بار ایک پاکستانی شہری محمد فیصل خالد کو پاکستانی پاسپورٹ پر اسرائیل جانے کی اجازت ملی۔ اسی دور میں معروف صحافی احمد قریشی ایک وفد کے ہمراہ اسرائیل گیا اور اس نے دعوی کیا کہ پی ٹی آئی حکومت اسرائیل کے ساتھ تعلقات استوار کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی اپنی ایک تقریر میں کہا کہ عمران خان اسرائیل کو تسلیم کرنے کو بلکل تیار تھے۔ لیکن وہ ابھی یہ بات اپنے لوگوں سے چھپانا چاہتے تھے۔ 

عمران خان حکومت میں پی ٹی اے نے Sandvine کمپنی سے معاہدہ کیا جس کے بعد پرسنل اور ہر طرح کے ڈیٹا تک ان کی رسائی ہوگئی۔ یہ کمپنی اسرائیلی سائبر وارفئیر کمپنی NSO کی سسٹر کمپنی ہے اور فرنسسکو پارٹنر ہے جس نے شام، ترکی اور مصر میں عوام کے خلاف جبری کاروائیوں کا ڈیٹا مہیا کیا۔ 

عمران خان کی ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کے فوراً بعد انڈیا نے کشمیر خود میں ضم کر لیا۔ عمران خان نے اس پر کسی قسم کا احتجاج نہیں ہونے دیا بلکہ خاموشی اختیار کرنے کا حکم دیا۔ نہ عالمی عدالت گیا اور نہ اقوام متحدہ گیا۔ اسکا بڑا بہت سوشل میڈیا نیٹورک پر بھی اس ایشو پر بلکل خاموش رہا۔ 

عمران خان نے اپنی حکومت میں ایسے اقدامات کیے جس نے پاکستان کی ہر لحاظ سے پاکستان کی سلامتی کو خطرے میں ڈال دیا تھا۔ اس نے تاریخ کا سب سے بڑا قرضہ لے کر ایسے منصوبوں پر لگایا جس میں عوام کو وقتی ریلیف ملتا ہے لیکن ملک کا بیڑہ غرق ہوجاتا ہے جیسے قرضہ لے کر صحت کارڈ دینا اور سوا کروڑ آبادی کو ماہانہ وظیفہ دینا۔ جس پر اس کے اپنے وزیر کہنے لگے کہ ملک کسی بھی وقت دیوالیہ ہوسکتا ہے۔ ساتھ ساتھ اس نے پاکستان کے سب سے قریبی سٹرٹیجک پارٹنرز چین، سعودی عرب، یواے ای اور ترکی سے تعلقات بگاڑ لیے۔ سی پیک کو فریز کر دیا اور شاہ محمود قریشی نے اعلان کیا کہ ہمیں سعودی عرب کے بغیر آگے بڑھنا ہوگا۔ 

اس کے بعد ایک عشرے تک ہزاروں جانیں دے کر درجنوں آپریشنز کر کے بھگائے گئے دہشتگردوں کو ملک میں واپس ملک لے آیا۔ حتی کہ جو جیلوں میں تھے ان کو بھی رہا کرنے کا حکم دیا۔ 

پھر جوں ہی اسکی حکومت گئی تو اس نے پاکستان سلامتی کے اکلوتے ستون پاک فوج کو اپنے نشانے پر لے لیا۔ پاکستان کی تاریخ کی سب سے بڑی پاک فوج مخالف مہم چلائی۔ حتی کہ فوجی تنصیابات پر باقاعدہ بلوائی حملے کروائے۔ یہ سب ایسے اقدامات تھے جن کا ہمارے دشمن شائد خواب دیکھتے ہوں۔ 

یہ بھی ایک دلچسپ اتفاق ہے کہ پی ٹی آئی کارکن عمران خان اور پی ٹی آئی کا آفیشل اکاؤنٹ فالو کرتے ہیں اور جو بیانیہ وہاں سے آتا ہے وہی پی ٹی آئی کا بیانیہ ہوتا ہے۔ لیکن جب شیخ مجیب کے حوالے سے ویڈیو شائع کی گئی تو تمام پی ٹی آئی راہنماؤں نے اعتراف کیا کہ ہمیں ان اکاؤنٹس کا کچھ نہیں پتہ نہ ہماری منظوری سے مواد پوسٹ ہوتا ہے۔ ان کو امریکہ سے آپریٹ کیا جاتا ہے۔ حتی کہ عمران خان نے بھی لاعملی کا اظہار کیا۔ یعنی پی ٹی آئی کا بیانیہ بناتا ہی امریکہ ہے۔ 

پی ٹی آئی کے سوشل میڈیا کا ہیڈ جبران الیاس سی آئی اے کا سابق افسر ہے۔ لیکن پی ٹی آئی یا عمران خان کو اس پر کوئی ایشو نہیں۔ 

یہ بھی دلچسپ بات ہے کہ عمران خان اور پی ٹی آئی نے لیے دنیا میں صرف دو ممالک نے آواز اٹھائی اسرائیل اور امریکہ۔ سعودی عرب، ایران، چین، ترکی، قطر، ملائشیا حتی کہ روس بھی اس پر خاموش ہیں۔ جس اسرائیل اور امریکہ کو فلسطینی بچوں تک پر ترس نہیں آرہا انکو عمران خان اور پی ٹی آئی سے کیا ہمدردی ہے؟

پی ٹی آئی کے کئی بڑے صحافی اور ایکٹیوسٹ بشمول معید پیرزادہ اور ڈاکٹر آصف محدود وغیرہ حالیہ جنگ میں اسرائیل کی حمایت کر رہے ہیں۔ عادل راجہ اور معید پیرزادہ پاکستان کے سب سے قریبی دوست چین پر پابندیاں لگانے کے مطالبات کرتے رہتے ہیں۔ 

بشری بی بی کے شوہر خاور مانیکا نے عدالت میں بیان جمع کروایا ہے کہ میری سالی مریم وٹو جو کہ اب عمران خان کی سالی ہے کے یہودی لابی کے ساتھ گہرے مراسم ہیں اور وہ دبئی میں رہتی ہے۔

پی ٹی آئی اوورسیز روزانہ کوئی نہ کوئی احتجاج کر رہی ہوتی ہے لیکن اسرائیل کے خلاف یا فلسطین کے حق میں اج تک ایک بھی مظاہرہ نہیں کیا۔

عمران خان نے ان امریکی اراکین کانگریس سے مدد مانگی جو غزہ پر ایٹم بم گرانے کے مطالبے کر رہے ہیں۔ ان میں برڈ شرمین نمایاں ہیں۔ 

حال ہی میں پاکستان نے امریکی مداخلت کے خلاف قرار داد پاس کی جس میں فلسطینیوں اور کشیمریوں پر ظلم کی بھی مذمت کی گئی تھی تو پی ٹی آئی نے ڈٹ کر اس قرار داد کی مخالفت کی۔ 

کیا واقعی عمران خان مغرب کا آلہ کار ہے جو آزادی کے نعروں کی آڑ میں پاکستان کو مکمل طور پر مغرب کی غلامی میں دے دینا چاہتا ہے؟

تحریر شاہد خان


Comments

Popular posts from this blog

عمران خان ریپٹلین سائیکوپیتھ

نفسیاتی مریض یا پاگل لفظ 'سائیکوپیتھ' کا درست ترجمہ نہیں۔ بلکہ 'سائیکوپیتھ' عام لوگوں کی نسبت ذہنی طور پر زیادہ چاک و چوبند ہوسکتے ہیں۔ ان کو 'ہیومن پریڈیٹرز' بھی کہا جاتا ہے۔ 'ہیومن پریڈیٹرز' یعنی یہ انسانوں کی جان، مال حتی کہ ان کے احساسات اور جذبات کا بھی شکار کرتے ہیں۔  وہ یہ سب یہ کیسے کر لیتے ہیں اور میں نے عنوان میں عمران خان کا نام کیوں لکھا ہے؟ اس کا جواب یہ ہے کہ 'سائیکوپیتھ' میں دوسرے انسانوں سے الگ کچھ صفات ہوتی ہیں جو ان کو قدرتی شکاری بناتی ہیں۔ انکی یہ صفات دنیا بھر کے ماہرین نے برسوں کی تحقیق اور محنت کے بعد جمع کی ہیں اور حیرت انگیز طور پر وہ تقریباً ساری عمران خان میں پائی جاتی ہیں۔  سائیکوپیتھس کو 'ریپٹلینز' بھی کہا جاتا ہے۔ کیونکہ انکی کچھ عادتیں ریپٹلینزجیسی ہوتی ہیں۔ ریپٹلینز کے بارے میں قرآن اور سائنس نے کچھ آگہی دی ہے اس پر بھی بات کرینگے۔  اگر آپ ایک بار ٹھنڈے دل سے یہ مضمون پڑھ لیں تو شائد آپ عمران خان کی مقبولیت، شخصیت، سوچ اور فیصلوں کو سمجھ لیں۔ بہت سی چیزوں کے بارے میں آپ کی حیرت دور ہوسکتی ہے۔  ریپٹلین سائیک

دریائے فرات کا خشک ہونا

 دریائے فرات کے کناروں سے انسانی تہذیب نے جنم لیا۔ ذراعت، لکھائی، پہیہ اور قانون یہ چار چیزیں یہیں ایجاد ہوئیں۔ شراب، موسیقی اور شاعری نے بھی یہاں سے جنم لیا۔ پہلی بار وقت کو سال، مہینوں اور دن کو چوبیس گھنٹوں میں یہیں تقسیم کیا گیا۔  دریائے فرات کی حالیہ تصاویر خوفناک ہیں۔ وہ تیزی سے خشک ہورہا ہے۔ توراۃ مقدس کے مطابق دریائے فرات کا خشک ہونا انسانوں کی تباہی کی پہلی علامت ہوگی۔ خالق حقیقی انسانوں کا خاتمہ کرنے سے پہلے اس عظیم دریا کو خشک دے گا جہاں سے یہ انسان پھلے پھولے۔  ایک اندازے کے مطابق دریائے فرات آدھا خشک ہوچکا ہے۔ اسکے پانی پر انحصار کرنے والے لوگ بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔ قریب کی بہت سی زمینیں بنجر ہوگئی ہیں۔  بائبل میں لکھا ہے کہ " چھٹے فرشتے نے اپنا پیالہ دریائے فرات پر ڈالا، جس سے اسکا پانی خشک ہوگیا اور مشرق سے بادشاہوں کی آمد کا راستہ کھل گیا۔" بائبل کے مطابق انسانوں کا خاتمہ ہونے سے پہلے ایک عظیم جنگ ہوگی اور وہ جنگ شروع ہونے سے پہلے دریائے فرات خشک ہوجائیگا۔ مشرق سے آنے والے یہ بادشاہ اس عظیم جنگ میں حصہ لینگے۔ (خشک ہونے سے مراد یہ بھی ہوتی ہے کہ دریا اپنا بیشت

میمو گیٹ سکینڈل کیا ہے

 مئی 2011ء میں اس وقت کے صدر پاکستان آصف علی زرداری کی جانب سے امریکن ایڈمرل مائکل مولن کے نام ایک خط لکھا گیا جو میمو گیٹ سکینڈل کے نام سے مشہور ہے۔ اس خط میں آصف زرداری نے امریکہ سے پاک فوج اور آئی ایس آئی کے خلاف مدد طلب کی جسکے بدلے امریکہ کو مندرجہ ذیل پیشکشیں کیں۔  1۔۔امریکی سفارشات کی روشنی میں اسامہ بن لادن کو پناہ دینے یا اس سے تعلقات رکھنے والے تمام مشتبہ جرنیلوں کے خلاف کاروائی۔ پاک فوج کی تمام سینیر قیادت بشمول چیف جنرل کیانی اور ڈی جی آئی ایس آئی جنرل پاشا کی فوری معطلی۔  2۔ امریکہ کی پسندیدہ شخصیات پر مشتمل ایک نئے سول دفاعی ادارے کا قیام جو آئی ایس آئی کو کنٹرول کرے۔  3۔ امریکن فورسز کو پاکستان بھر میں کہیں بھی آپریشن کرنے کی اجازت۔ جس میں پاکستان کی سول حکومت ان کی مکمل معاؤنت کرے گی۔  4۔ ایمن اظوہری ، ملا عمر اور سراج الدین حقانی کو فوری طور پر امریکہ کے حوالے کرنے کا وعدہ۔ 5۔ نیا قائم کیا گیا سول دفاعی ادارہ فوری طور پر آئی ایس آئی کے " سیکشن ایس" کو بند کردے گا جو امریکہ کے خلاف افغان جہاد کو کنٹرول کرتا ہے۔ نیز آئی ایس آئی اور افغان طالبان کے درمیان موجود